ڈبلیو ایچ او: غزہ میں ہر تیسرا کوویڈ ٹیسٹ مثبت آرہا ہے

مقبوضہ فلسطینی علاقوں خاص کر غزہ میں میں ڈبلیو ایچ او کے سربراہ، ڈاکٹر جیرالڈ راکین شیشاب نے کہا “جانچ ہی وجہ نہیں ہے کہ کیسوں کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے۔”

غزہ میں ہر تیسرا کوویڈ ٹیسٹ مثبت آرہا ہے

مقبوضہ فلسطین میں، ایک ویکسین کا روڈ میپ واضح نہیں ہے کیونکہ اسرائیل نے اپنے ٹیکے لگانے کا پروگرام شروع کیا ہے

عالمی ادارہ صحت نے بتایا، ہر تیسرا ٹیسٹ غزہ کی پٹی میں کمیونٹی ٹرانسمیشن میں خطرناک اضافے کی وجہ سے مثبت آرہا ہے۔

“غزہ کے کیسز میں نسبتا زیادہ حساسیت پائی جاتی ہے – ہر تیسرا ٹیسٹ مثبت موصول آرہا ہے۔”

غزہ میں ہر تیسرا کوویڈ ٹیسٹ مثبت آرہا ہے

ہفتے کے روز اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاھو نے فائزر بائیو ٹیک کوویڈ 19 ویکسین وصول کی، جس میں انہوں نے اسرائیل کے ٹیکے لگانے کے پروگرام کا آغاز کیا۔ لیکن مقبوضہ علاقوں میں ویکسین لگانے کی ٹائم لائن ابھی واضح نہیں ہے۔

“فلسطینی اور اسرائیلی معیشتیں اتنے قریب سے جڑے ہوئے ہیں، اس سے اسرائیل کو یہ احساس حاصل ہوگا کہ فلسطینیوں کو کورونا سے بچاؤ کے انجکشن لگاۓ جائیں۔” ڈاکٹر روکنشاب نے کہا کہ جب تک فلسطینی سلامت نہیں ہیں اسرائیلی محفوظ نہیں ہیں۔

غزہ میں ہر تیسرا کوویڈ ٹیسٹ مثبت آرہا ہے

ادھر غزہ کی پٹی میں کیسز کی تعداد میں تیزی سے اضافہ جاری ہے۔

ڈبلیو ایچ او کی غزہ کی پٹی کے بارے میں تازہ ترین صورتحال میں 33،000 کیسز دکھائے گئے ہیں، جن میں اسپتال کے بیڈ کوویڈ 19 مریضوں کو صرف 70 فیصد سے کم رہائش پر مختص ہیں۔

لیکن یہ صرف ویکسین کی دستیابی ہی نہیں ہے جو اپٹیک کو متاثر کرسکتی ہے۔

اقوام متحدہ کے حکام پر امید نہیں ہیں۔

ستمبر میں اقوام متحدہ کی تجارت و ترقی کے سکریٹری جنرل مخیسہ کیتیوئی نے کہا، “عالمی برادری کو فوری طور پر فلسطینی عوام کے لئے اپنی حمایت دوگنی کرنا چاہئے تاکہ وہ وبائی امراض سے ہونے والے معاشی بحران کا مقابلہ کرنے کے قابل بنائے۔”

You might also like